8

شہریت ترمیمی بل کےخلاف مظاہرہ، ہندوستان کبھی جناح کا ملک نہیں بن سکتا: عمیق جامعی– News18 Urdu




شہریت ترمیمی بل کے خلاف ‘ناگرتا بچاؤآندولن’ کےتحت مظاہرہ کیا گیا۔ شہریت ترمیمی بل کے خلاف احتجاج کرنےکےلئے’ناگرتا بچاؤآندولن‘ کےنام ایک تنظیم قائم کی گئی ہے۔

Dec 09, 2019 09:06 PM IST | Updated on: Dec 09, 2019 09:07 PM IST


شہریت ترمیمی بل کےخلاف لکھنؤ میں مظاہرہ

لکھنؤ: شہریت ترمیمی بل (سی اے بی) اورمجوزہ این آرسی کی مذمت کرتے ہوئے مشہور سماج وادی لیڈرعمیق جامعی نےکہا کہ ہندوستان کبھی جناح کا ملک نہیں بن سکتا۔ یہ بات انہوں نےآج یہاں ’ناگرتا بچاؤآندولن‘ کےتحت شہریت ترمیمی بل کے خلاف منعقدہ مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئےکہی۔ شہریت ترمیمی بل کے خلاف احتجاج کرنےکےلئے’ناگرتا بچاؤ آندولن‘ کےنام ایک تنظیم قائم کی گئی ہے، جس کےکنوینرعمیق جامعی اورعبدالحفیظ گاندھی اوراطہرحسین بنائےگئے ہیں۔

انہوں نےکہا کہ سوامی ویویکا نند نےکہا تھا کہ امریکہ کےشکاگومیں کہا تھا ”میں دنیا کے اس ملک سےآیا ہوں جس نےدنیا کےتمام لوگوں کوجگہ دی“۔ انہوں نےکہا کہ اس بل سے ہندوستان کی سیکولرزم، رواداری اورمشترکہ تہذیب پرچھوٹ پہنچےگی، جس کےلئے ہندوستان پوری دنیا میں مشہورہے۔

پروگرام میں خطاب کرتے ہوئےعمیق جامعی نےکہا کہ سی اے بی آئین مخالف ہے۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ لوگوں کوموجودہ حکومت کےآئینی مخالف اقدامات کی کھل کرمخالفت کرنا چاہئی۔ انہوں نےکہا کہ شہری ترمیمی بل (سی اے بی) اوراین آرسی کے بارے میں شعورپیدا کرنا ضروری ہے۔ لوگوں کومعلوم ہونا چاہئےکہ یہ دونوں التزام ہندوستان کی شبیہ پرداغ لگائیں گے۔ اصل مسائل سے لوگوں کی توجہ ہٹانے کےلئے حکومت یہ سب کررہی ہے۔ یہ حکومت ہمیشہ فرقہ وارانہ تقسیم پیدا کرتی ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ لوگوں کو پناہ کے ساتھ ساتھ شہریت بھی ملنی چاہئے، اگر وہ مذہبی بنیاد پران کےاپنے ہی ممالک میں ستائے جاتے ہیں، لیکن مذہب ایسے فوائد طےکرنےکا معیارنہیں ہوسکتا۔

مشہور سماجی کارکن لاء کالج کے اسسٹنٹ پروفیسرعبد الحفیظ گاندھی نے خطاب کرتے ہوئےکہا کہ ہندوستان میں مذہب کبھی بھی شہریت کی بنیاد نہیں رہا ہے۔ حکومت کوشش شہریت کومذہب مرکوزبنانےکی ہے۔ سیکولرازم آئین کی اصل شناخت ہے۔ اس ملک کی سیکولرروایات کی خلاف ورزی میں کوئی قانون بنا کراس ڈھانچےکی خلاف ورزی نہیں کی جانی چاہئے۔ اس ملک کی سیکولرروایات کی خلاف ورزی میں کوئی قانون بنا کراس ڈھانچے کی خلاف ورزی نہیں کی جانی چاہئے۔ انہوں نے مزید کہا سی اے بی اوراین آرسی ایک ہی سکےکے دوپہلو ہیں۔ ہمارے ملک کی روح کو بچانےکےلئےدونوں کےخلاف احتجاج کیا جانا چاہئے۔






Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں