4

دہلی تشددپروزیر داخلہ امت شاہ استعفیٰ دیں،ٹرمپ نے گاندھی کی توہین کی:اشوک گہلوت

جے پور:26فروری(بی این ایس )
راجستھان کے وزیراعلیٰ اشوک گہلوت نے بدھ کو کہا کہ قومی راجدھانی دہلی میں تشدد کے پیش نظر مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کو اپنے عہدے سے استعفیٰ دینا چاہیے۔اشوک گہلوت نے اس بارے میں کیے گئے ٹویٹ میں لکھاہے کہ وزیر داخلہ کواخلاقیات کی بنیاد پر استعفیٰ دینا چاہیے کیونکہ انہوں نے لوگوں کی جان بچانے اور حالات معمول پر کچھ نہیں کیا۔ دہلی جل رہی تھی اور ہم نے وزیر داخلہ کی جانب سے کوئی کارروائی نہیں دیکھی۔گہلوت کے مطابق کانگریس صدر سونیا گاندھی نے ٹھیک ہی امت شاہ کے استعفیٰ کا مطالبہ کیا ہے کیونکہ وہ دہلی میں تشدد کے دوران حالات پر قابو پانے میں ناکام رہے ہیں۔اشوک گہلوت نے کہا کہ مرکزی اور دہلی کی حکومت کو سونیا گاندھی کی طرف سے اٹھائے گئے سوالات کاجواب دیناچاہیے اور کانگریس دہلی میں امن و ہم آہنگی بحال کرنے کے لیے ہر ممکن مددکے لیے تیارہے۔ انہوں نے کہاہے کہ مرکزی حکومت کو اس بارے میں پہل کرتے ہوئے نہ صرف اپوزیشن جماعتوں بلکہ عام عوام سے بات چیت ضروری ہے۔اس سے پہلے صحافیوں سے بات چیت میں اشوک گہلوت نے کہاہے کہ ہم تو اپیل کرنا چاہتے ہیں، چاہے کوئی ہو،اپوزیشن ہو، چاہے کوئی مذہب کے لوگ ہوں، ذات کے لوگ ہوں، تشدد کا مقام نہیں ہونا چاہیے۔ زندگی کے اندرتشددکامقام کبھی نہیں ہونا چاہیے اورمہاتما گاندھی نے ہمیں یہی سکھایاہے۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے امریکی صدرڈونالڈ ٹرمپ کی طرف سے سابربتی آشرم میں اپنے تبصرے میں مہاتما گاندھی کا ذکر نہیں کیے جانے پرتنقیدکی ہے۔انھوں نے کہاہے کہ مجھے اس بات کا افسوس ہے کہ ٹرمپ سابرمتی آشرم گئے اور وہاں کی کتاب میں لکھے تبصرہ میں مہاتماگاندھی کا نام تک نہیں لکھا۔گہلوت نے کہاہے کہ جوشخص مہاتما گاندھی کو مانتا ہی نہیں ہے، جس شخص کے نظریے مہاتما گاندھی سے ملتی ہی نہیں ہیں، ان کو لے گئے، سابرمتی آشرم لے گئے اور جو تبصرے لکھے جاتے ہیں، وہاں مہاتما گاندھی کا نام نہیں لکھا، وہاں نریندر مودی کا نام لکھا، وہ مجھے یہاں لے کر آئے ہیں۔میں سمجھتا ہوں کہ اس سے ملک کی ساکھ کو ٹھیس لگی ہے۔





Source link

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں