عیدِ قربان؛بھارت میں گئو رکھشا کی آڑ میں مسلمانوں پر تشدد کا سلسلہ جاری رہا


ڈرائیور کو گائے کا گوشت لے جانے کے جرم میں شدید تشدد کا نشانہ بنایاگیا۔ فوٹو، انٹرنیٹ

گروگرام: بھارت میں عید کے موقعے پر بھی گئو رکھشا کی آڑ میں مسلمانوں کو ہراساں کرنے اور تشدد کا نشانہ بنانے کا سلسلہ جاری رہا۔  

بھارتی شہر گڑ گاؤں (گروگرام)  میں انتہا پسند ہندؤوں نے مسلمان ٹرک ڈرائیور پر گائے گا گوشت لے جانے کے جرم میں  ڈنڈوں ، ہتھوڑوں ، لاتوں اور گھونسوں کی بارش کردی۔

بھارتی میڈیا کے مطابق بھارتی دارلحکومت نئی دہلی کے قریبی  ریاست ہریانہ کے  شہرگڑ گاؤں (گرو گرام) میں لقمان نامی ٹرک ڈرائیور ہندو انتہا پسندوں کے ہتھے چڑھ گیا۔ مسلمان ٹرک ڈرائیور کا قصور صرف اتنا تھا کہ وہ گائے گا گوشت لے کر جا رہا تھا۔

ہندو انتہا پسندوں نے لقمان کو بے رحمانہ تشدد کا نشانہ بنایا۔ اس پر  ڈنڈوں ، ہتھوڑوں ، لاتوں اور گھونسوں کی بارش کردی، ۔ اس دوران عوام اور پولیس خاموش تماشائی بنی رہی۔ حالت غیر ہونے پر ڈرائیور کو اسپتال منتقل کرکے نا معلوم افراد کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔

واضح رہے کہ ریاست ہریانہ میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی حکومت ہے اور یہاں کے وزیراعلیٰ منوہر لعل کھٹر مسلمانوں کے خلاف نفرت انگیز بیانات اور شدت پسندانہ نظریات کے باعث کئی مرتبہ تنازعات میں گھرے رہے ہیں۔

دوسری جانب بھارت 2104 میں بی جے پی کی حکومت کے قیام کے بعد گئو رکھشا کے نام پر مسلمانوں، دلتوں اور دیگر اقلیتی گروہوں کو نشانہ بنانے کے واقعات میں کئی گنا اضافہ ہوا ہے۔





Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *