دہلی فساد: دہلی پولیس کا دعویٰ- طاہر حسین نے ہندووں کو سبق سکھانے کے لئے کی سازش– Urdu News


دہلی پولیس کے مطابق، عام آدمی پارٹی (Aam Aadmi Party) کے معطل کونسلر طاہر حسین (Tahir Hussain) نے پوچھ گچھ میں انکشاف کیا ہے کہ وہ دہلی فساد کا ماسٹر مائنڈ ہے۔

دہلی فساد: دہلی پولیس کا دعویٰ- طاہر حسین نے ہندووں کو سبق سکھانے کے لئےکی سازش

نئی دہلی: دہلی پولیس کے مطابق، عام آدمی پارٹی (Aam Aadmi Party) کے معطل کونسلر طاہر حسین (Tahir Hussain) نے پوچھ گچھ میں انکشاف کیا ہے کہ وہ دہلی فساد کا ماسٹر مائنڈ ہے۔ ساتھ ہی اس نے بتایا، ’جب میں 2017 میں عام آدمی پارٹی کا کونسلر بنا تھا، تب سے ہی میرے دل میں تھا کہ میں اب سیاست اور پیسوں کی بدولت ہندووں کو سبق سکھا سکتا ہوں۔ سرکاری قبول نامے کے مطابق، طاہر حسین کو اس کام میں خالد سیفی اور پاپولر فرنٹ آف انڈیا (PFI) کا پورا ساتھ ملا۔

طاہر حسین نے کہی یہ بات

طاہر حسین نے دہلی پولیس کی پوچھ گچھ میں اعتراف کیا، ’میرے جاننے والے خالد سیفی نے کہا کہ تمہارے پاس سیاسی طاقت اور پیسہ دونوں ہے، جس کا استعمال ہندووں کے خلاف اور قوم کے لئے کریں گے۔ میں اس کے لئے ہمیشہ تیار رہوں گا’۔ اس نے بتایا، ’کشمیر میں دفعہ 370 ہٹنے کے بعد خالد سیفی میرے پاس آیا، اس نے بولا کہ اس بار اب ہم خاموش نہیں بیٹھیں گے۔ اسی درمیان رام مندر کے فیصلے کے ساتھ شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) قانون بھی آگیا۔ اب مجھے لگا کہ پانی سر سے اوپر جاچکا ہے۔ اب تو کچھ قدم اٹھانا پڑے گا۔

اس طرح سے کی گئی سازشطاہر حسین کے قبول نامےکے مطابق، ’8 جنوری کو خالد سیفی نے مجھے جے این یو کے سابق طالب علم عمر خالد سے شاہین باغ میں پاپولر فرنٹ آف انڈیا (پی ایف آئی) کے دفتر میں ملوایا تھا، جہاں عمر خالد نے بولا کہ وہ مرنے مارنے کو راضی ہے۔ وہیں، خالد سیفی نے کہا کہ پی ایف آئی کا رکن دانش ہندووں کے خلاف جنگ میں ہماری پوری فائنانشیل مدد کرے گا’۔ ساتھ ہی طاہر حسین نے بتایا کہ پاپولر فرنٹ کے دفتر میں ہم نے پلان بنایا، دہلی میں کچھ ایسا کریں گے، جس سے یہ حکومت ہل جائے، اس کے بعد وہ شہریت قانون واپس لے لیں گے۔ خالد سیفی کا کام لوگوں کو بھڑکا کر سڑکوں پر اتارنے کا تھا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *