وزیراعلیٰ ادھو کے خلاف شکایت درج کرائیں گے بی جے پی کے ایم ایل اے | Online Urdu News Portal

وزیراعلیٰ ادھو کے خلاف شکایت درج کرائیں گے بی جے پی کے ایم ایل اے | Online Urdu News Portal


ممبئی، 14 ستمبر (بی این ایس )
ممبئی کے ساکیناکا ریپ کیس کے بعد خواتین کی حفاظت کے حوالے سے سوالات اٹھ رہے ہیں۔ مہاراشٹر کے وزیراعلیٰ ادھو ٹھاکرے نے اس سلسلے میں پولیس کے ساتھ میٹنگ کی۔ میٹنگ میں وزیراعلی ادھو نے صوبائی لوگوں سے تفصیلات مانگی ہیں۔ اس کے علاوہ وزیراعلیٰ نے کہا کہ مہاراشٹر آنے والوں کا رجسٹریشن کرایا جائے۔ اب بی جے پی وزیر اعلی کے اس بیان پر حملہ کر رہی ہے۔ بی جے پی ایم ایل اے اتول بھٹکلکر نے کہا کہ وہ ادھو کے خلاف مقدمہ درج کرائیں گے۔وزیراعلیٰ کے بیان پر اتل بھات کالکر نے کہاکہ عصمت دری کرنے والوں کی کوئی ذات، کوئی مذہب اور کوئی صوبہ نہیں ہوتا ہے، ایسی صورتحال میں وہ مہاراشٹر آتے ہیں اور عصمت دری کرتے ہیں، یہ کہنا بالکل غلط ہے اور دو سماج کوتوڑنے والا۔ یہی وجہ ہے کہ ہم سمتا نگر پولیس اسٹیشن جا کر سیکشن 153 اے کے تحت سی ایم ادھو ٹھاکرے کے خلاف مقدمہ درج کرائیں گے۔ایم ایل اے اتل بھات کالکر نے سوال پوچھا ہے کہ ادھو ٹھاکرے کی کابینہ میں دھننجے منڈے کون ہیں؟ ان پر کیا الزامات ہیں؟ جب ایک خاتون اپنے خلاف شکایت کرنے پولیس اسٹیشن گئی تو اسے ایک اور کیس میں گرفتار کر لیا گیا۔ سابق وزیر سنجے راٹھود ملزم ہیں۔ یہ لوگ صوبائی کیا ہیں؟ اس لیے وزیراعلیٰ کو اپنے بیان پر معافی مانگنی چاہیے۔انہوں نے کہاکہ یہ ادھو ٹھاکرے تھے جو کہتے تھے کہ روہنگیا مسلمان کیا کرتے ہیں؟ بنگلہ دیشی مسلمان کیا کرتے ہیں؟ سونیا گاندھی کے ساتھ حکومت بنانے کے بعد اب ادھو ٹھاکرے کو روہنگیا مسلمان اور بنگلہ دیشی مسلمان یاد نہیں ہے حالانکہ وہ ملک کے شہری بھی نہیں ہیں جن کا اندراج کیا جائے، لیکن اب مراٹھی لوگوں کو خوش کرنے اور اپنی ناکامی چھپانے کیلئے وزیر اعلیٰ کی طرف سے ایسا بیان دیا جا رہا ہے۔



Source link

Leave a Reply