کسانوں کا احتجاج پھر نشانہ،4ریاستوں کو نوٹس۔حقوق انسانی کمیشن سرگرم۔ احتجاج کی بنا پر9 ہزار صنعتی اکائیوں اورعوامی آمدورفت کے متاثر ہونے کا الزام۔ دہلی ، یوپی ،ہریانہ اور راجستھان سے جواب طلب کیا

کسانوں کا احتجاج پھر نشانہ،4ریاستوں کو نوٹس۔حقوق انسانی کمیشن سرگرم۔ احتجاج کی بنا پر9 ہزار صنعتی اکائیوں اورعوامی آمدورفت کے متاثر ہونے کا الزام۔ دہلی ، یوپی ،ہریانہ اور راجستھان سے جواب طلب کیا


کسانوں کا احتجاج پھر نشانہ،4ریاستوں کو نوٹس۔حقوق انسانی کمیشن سرگرم۔ احتجاج کی بنا پر9 ہزار صنعتی اکائیوں اورعوامی آمدورفت کے متاثر ہونے کا الزام۔ دہلی ، یوپی ،ہریانہ اور راجستھان سے جواب طلب کیا

نئی دہلی، 15؍ستمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) کسانوں کی کامیاب تحریک کو کس طرح ختم کیا جائے اور کسانوں کی شبیہ کو کس طرح برباد کیا جائے اس سلسلے میں مسلسل تگ و دو جاری ہے لیکن اب تک مخالفین کو کامیابی نہیں ملی ہے مگر اب کسانوں کی تحریک کو حقوق انسانی کی خلاف ورزی بتانے کی کوشش شروع ہو گئی ہے۔ اس کے تحت حقوق انسانی کمیشن نے کسان تحریک کے سبب عوام، صنعتی یونٹس اور کمپنیوں کو ہونے والی مشکلات سے متعلق شکایات کا نوٹس لیتے ہوئے دہلی،  ہریانہ، اترپردیش، راجستھان اور مرکزی حکومت کو نوٹس جاری کرکے جواب طلب کیا ہے۔ کمیشن نے کہا  ہے کہ اس بابت انہیں کئی شکایات ملی ہیں جن میں الزام عائد کیا گیا ہے کہ تحریک کے سبب راستے بند ہونے سے چھوٹی بڑی  ۹۰۰؍ سے زیادہ صنعتی یونٹس پر اثر پڑا ہے۔ تحریک کے سبب سڑکیںبھی متاثر ہوئی ہیں جس سے عام لوگوں، مریضوں ،جسمانی طور پر معذور لوگوں اورمعمر افراد کو خصوصی طور پر پریشانی ہو رہی ہے۔

  کمیشن کو یہ بھی رپورٹ ملی ہے کہ تحریک کے مقامات کے پاس بیریکیڈنگ ہونے کے سبب عوام کو بہت لمبی دوری طے کرنی پڑتی ہے۔ شکایات کا نوٹس لیتے ہوئے کمیشن نے اترپردیش، دہلی، ہریانہ اور راجستھان کے چیف سیکریٹریز اور پولیس ڈائریکر جنرل سے کہا ہے کہ وہ اس بابت کی گئی کاروائی کی تمام تفصیلات پیش کریں۔ کمیشن کو ملنے والی  شکایات میں یہ بھی الزام عائد کیا گیا ہے کہ تحریک کے مقامات پر کورونا پروٹوکال پر عمل درآمد نہیں کیا جا رہا ہے۔ساتھ ہی آس پاس رہنے والوں کو راستے بند ہونے کے سبب اپنے گھروں میں قید ہونا پڑ رہا ہے۔ کمیشن کا ماننا ہے کہ احتجاجی مظاہرہ انسانی حقوق کا  مسئلہ ہے لیکن ساتھ ہی اس کے سبب دیگر لوگوں کے بنیادی حقوق کے متاثر ہونے کے بعد بھی توجہ دینےکی ضرورت ہے۔

 کمیشن نے اپنے  نوٹس میںانسٹی ٹیوٹ آف اکنامک گروتھ (آئی ای جی ) سے کہا ہے کہ وہ کسانوں کے احتجاج کی وجہ سے ملک کی مختلف  معاشی سرگرمیوں پر پڑنے والے اثرات کا جائزہ لیں، انہیں سلسلہ وار درج کریں اور ایک تفصیلی رپورٹ  پیش کرتے ہوئے  بتائیں کہ اگر معاشی حالات پر کوئی اثر پڑا ہے تو اسے دور کرنے کے لئے کیا اقدامات کئے جاسکتے ہیں۔ کمیشن کے مطابق صنعتوں اور کمرشیل اداروں پر اس تحریک کا خاصا اثر ہوا ہے لیکن زمین پر اس کے کتنے اثرات ہیں اس بارے میں تفصیلی رپورٹ کے ذریعے ہی معلوم ہو سکے گا اس لئے ضروری ہے کہ انسٹی ٹیوٹ ان حالات کا تفصیلی جائزہ لے  اور رپورٹ پیش کرے ۔ 



ایک نظر اس پر بھی

وزیر اعظم مودی نے علی گڑھ سےانتخابی مہم کا آغازکیا، کانگریس پر شدید تنقیدیں

وزیر اعظم نریندر مودی نے مغربی اترپردیش میں انتخابی بگل پھونکتے ہوئے کانگریس پر جم کر  تنقید یں کیں اور کہا کہ اس نے اپنی لگن اور قربانیوں سے ملک کو نئی سمت دینے والے راجا مہندر پرتاپ سنگھ جیسے قومی ہیرو سے ملک کی اگلی نسلوں کو روشناس نہیں کرایا۔ اسی لئے ملک ۲۰؍ویں صدی کی ان …

59 Minutes Ago

ہر گزرتے دن کے ساتھ ملک کی دولت اوراس کے وسائل پر کارپوریٹ گھرانے قبضہ کرتے جا رہے ہیں؛ ہریانہ میں منعقدہ مہاپنچایت میں کسان لیڈر اتل کمار انجان کا اظہار خیال

سوامی ناتھن کمیشن میں کسانوں کے واحد نمائندہ رہے اور آل انڈیا کسان سبھا کے قومی جنرل سکریٹری اتل کمار انجان نے حکومت پر ا لزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ ملک کی دولت کارپوریٹ گھرانوں کے قبضے میں ہے لیکن ’ملک بکنےنہیں دوں گا‘  جیسا نعرہ دے کر اقتدار میں آئی مودی حکومت نے اس نعرے …

1 Hour Ago

سنگھو بارڈر پر ایک جانب کی سڑک خالی کریں کسان: سپریم کورٹ

  سپریم کورٹ نے منگل کے روز کنڈلی – سنگھو بارڈر پر دھرنا دے رہے کسانوں سے ایک جانب کی سڑک خالی کرنے کو کہا ہے۔ سپریم کورٹ نے یہ فیصلہ مفاد عامہ عرضی پر سماعت کے دوران سنایا۔ کورٹ نے سونی پت ضلع انتطامیہ کو حکم دیا کہ قومی شاہراہ 44 پر کنڈلی سنگھو بارڈر پر مظاہرہ کر رہے کسانوں سے …

2 Hours Ago

ایئر انڈیا کی بولی میں دھاندلی، عدالت سے رجوع کروں گا:سبرامنیم سوامی

بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے رہنما اور راجیہ سبھا رکن پارلیمنٹ سبرامنیم سوامی نے سرکاری ایئرلائن ایئر انڈیا کو فروخت کرنے کے لیے جاری بولی کے عمل میں دھاندلی کا الزام لگایا ہے اور کہا ہے کہ وہ اس کے خلاف عدالت سے رجوع کریں گے –

2 Hours Ago



Source link

Leave a Reply