ملک کو 30 ٹریلین کا مقروض بنانے والوں کو سزائیں ملنی چاہیئیں، وزیراعظم


10 سال میں اتنا قرض لینے کے باوجود ڈیم بنائے نہ کوئی بڑا کام کیا، عمران خان کا تقریب سے خطاب— فوٹو:فائل
10 سال میں اتنا قرض لینے کے باوجود ڈیم بنائے نہ کوئی بڑا کام کیا، عمران خان کا تقریب سے خطاب— فوٹو:فائل

وزیراعظم عمران نے مسلم لیگ (ن) اور پیپلزپارٹی کی حکومتوں کو تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ 

فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) میں ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم کی افتتاحی تقریب سے خطاب میں وزیراعظم کا کہنا تھاکہ ہمارا بڑا مسئلہ یہ ہے کہ ہمارے پاس ملک چلانے کیلئے پیسے نہیں، ملک چلانے کیلئے ہمیں قرض لینا پڑتا ہے جبکہ اشرافیہ نے ملک میں کبھی ٹیکس کلیکشن سسٹم مضبوط نہیں ہونے دیا۔

ان کا کہنا تھاکہ ملک کو 30 ٹریلین کا مقروض بنانے والوں کو سزائیں ملنی چاہیئیں، 10  سال میں اتنا قرض لینے کے باوجود ڈیم بنائے نہ کوئی بڑا کام کیا بلکہ ماضی میں حکمرانوں نے بیرونی دوروں پر دس دس گنا زیادہ خرچ کیا۔

ان کا مزید کہنا تھاکہ عوام کو یقین ہوگا کہ پیسہ ان پر خرچ ہوگا تو وہ ٹیکس دیں گے، ملک اور عوام کی خوشحالی ٹیکس دینے میں ہے اور ہمارا ہدف 6ہزار ارب روپے کا ریونیو جمع کرنا ہے۔

وزیراعظم کا کہنا تھاکہ ٹیکنالوجی کی مدد سے ٹیکس وصولیوں میں اضافہ ہوگا، ایف بی آر کا ٹیکس وصولیوں میں بہت بڑا کردار ہے۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *