ہجوم میں شامل افراد کی بے حسی، ویڈیو بناتے، سیلفی لیتے رہے


ہجوم میں سے کسی نے مشتعل افراد کو روکنے کی کوشش نہیں کی، کچھ لوگ تشدد کی وڈیو بناتے اور سیلفیاں لیتے رہے— فوٹو: سوشل میڈیا
ہجوم میں سے کسی نے مشتعل افراد کو روکنے کی کوشش نہیں کی، کچھ لوگ تشدد کی وڈیو بناتے اور سیلفیاں لیتے رہے— فوٹو: سوشل میڈیا

سیالکوٹ کی ایک فیکٹری میں سری لنکا سے تعلق رکھنے والے منیجر کو مذہبی پوسٹر اتارنے کا الزام لگاکر قتل کردیا گیا۔

مشتعل ورکرز نے نہ صرف منیجر پر تشدد کرکے اسے جان سے مارا بلکہ اس کے لاش کو بھی سر عام جلا دیا۔

فیکٹری منیجر کے قتل اور اس کی لاش نذر آتش کرتے ہوئے ہجوم میں شامل افراد کی جانب سے بے حسی کا افسوس ناک مظاہرہ سامنے آیا۔

ہجوم میں سے کسی نے مشتعل افراد کو روکنے کی کوشش نہیں کی، کچھ لوگ تشدد کی وڈیو بناتے اور سیلفیاں لیتے رہے، کچھ افراد لاش پر بھی ڈنڈے برساتے رہے ، باقی ہجوم خاموش تماشائی بنا رہا۔



Source link

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *